جے آئی ٹی کے شہباز شریف سے سوالات، پبلک نیوز نے اندرونی کہانی کا کھوج لگا لیا

لاہور (شاکر اعوان) آمدن سے زائد اثاثوں اور منی لانڈرنگ کیس میں نیب جے آئی ٹی نے شہباز شریف سے کیا سوال و جواب کیئے۔ پبلک نیوز نےاندرونی کہانی کا کھوج لگا لیا۔

 

آمدن سے زائد اثاثوں اور منی لانڈرنگ کیس میں نیب لاہور نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے کیا تفتیش کی۔ پبلک نیوز نےاندرونی کہانی کا کھوج لگا لیا۔ نیب نے شہباز شریف سے ذرائع آمدن، کمپنیوں، وراثت کی تقسیم، غیر ملکی بینک اکاونٹس اور رمضان شوگر مل کے حوالے سے بھی پوچھ گچھ کی۔

 

نیب نے سوال کیا کہ اپنی اس آمدنی کی تفصیلات بتائیں جس سے پاکستان میں آپ کا کاروبار چل رہا ہے۔ شہباز شریف نے جواب دیا کہ میرے جاتی امرا کیٹل فارمز ہیں جس سے میرا گزر بسر ہوتا ہے۔ نیب جے آئی ٹی نے پوچھا کہ زرعی آمدن کی تفصیلات بتائی جائیں۔ آپ کے پاس کتنی زرعی زمین ہے اور کتنی زمین ٹھیکے پر لی گئی ہے۔ شہباز شریف نے مؤقف اختیار کیا کہ زرعی زمین سمیت جائیداد سے متعلق گوشواروں میں تمام اثاثے ظاہر ہیں۔ میں نے کوئی بھی زمین ٹھیکے پر نہیں لے رکھی ہے۔

نیب جے آئی ٹی نے پوچھا کہ کیا آپ کسی کمپنی یا کاروبار سے تنخواہ وصول کرتے ہیں۔  برطانیہ میں موجود بنک اکاونٹس اور بنک اسٹیٹمنٹس کی تفصیلات کیا ہے۔ شہباز شریف نے کہا کہ میں کسی بھی کمپنی یا بزنس سے تنخواہ وصول نہیں کرتا، غیر مکی اکاونٹس کا ابھی میرے پاس ریکارڈ نہیں۔

 

شہباز شریف نے یکم جنوری2009  کو ہونے والی جائیداد کی تقسیم کے متعلق سوال پر جواب دیا کہ اس کا ریکارڈ بھی ابھی دستیاب نہیں،2014  میں رمضان شوگر مل معراج اینڈ سراج فیملی سے لی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں